جمعہ, مئی 24, 2024
spot_img
ہومبلوچستانکوئٹہ: بلوچستان نیشنل پارٹی کی مرکزی کال پر وڈھ کی کشیدہ صورتحال...

کوئٹہ: بلوچستان نیشنل پارٹی کی مرکزی کال پر وڈھ کی کشیدہ صورتحال پر مختلف شہروں میں احتجاجی مظاہرے منعقد، پارٹی قائد سے اظہار یکجہتی

بلوچستان نیشنل پارٹی کی مرکزی کال پر وڈھ کی کشیدہ صورتحال کے خلاف اتوار کے روز بلوچستان کے مختلف شہروں میں احتجاجی مظاہرے منعقد کیے گئے۔ جس میں پارٹی رہنماؤں کے ساتھ کارکنوں نے بڑی تعداد میں شرکت کرکے پارٹی قائد سردار اختر مینگل کے ساتھ یکجہتی کا اظہار کیا۔

مظاہرین کا کہنا تھا کہ وڈھ میں جاری کشیدگی ظالم اور مظلوم کی لڑائی ہے۔ انہوں نے پارٹی قائد سردار اختر مینگل کے خلاف مورچہ زن مسلح قبائل کے شدید مذمت کرتے ہوئے ریاست سے مطالبہ کیا کہ ان مسلح جھتوں کو لگام ڈالا جائے۔

انہوں نے کہا ہے کہ بی این پی کو بلوچ قومی جدوجہد کا سزا دیا جارہا ہے لیکن پارٹی قومی جدوجہد سے ایک اینچ پیچھے نہیں ہٹے گی۔ انہوں نے کہا ہے کہ صوبائی حکومت و بلوچستان کے سیاسی قومی جماعتیں مسلے کے حل کیلئے سامنے آئیں وڈھ کا مسلہ خالصتا سیاسی ہے اسے وہ لوگ قبائلی رنگ دے رہے جو نہیں چاہتے بلوچستان امن کا گہوارا بنے۔

انہوں نے کہا کہ سردار اختر مینگل بلوچ قوم کی امید ہیں مقتدر حلقے بلوچستان میں جاری سیاسی اقابرین نواب اکبر بگٹی و دیگر کے ساتھ پیش آنے والے سانحہ سے سبق سیکھ گئے ہونگے۔ بلوچستان کے سیاسی معاملات میں مداخلت نیک شگون ثابت نہیں ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ وڈھ میں ڈیتھ اسکواڈ کی سرپرستی بند کیا جائے اور بلوچستان کو مذید کشت وخون کی طرف دھکیلنے سے باز رہا جائے انہوں نے کہا کہ ہم اس ملک کے ماننے والے ہیں جمہوریت آئین اور قانون پر یقین رکھتے ہیں اس ملک کے آئین و قانون جمہوری فریم ورک میں رہتے ہوئے بی این پی سیاسی جدوجہد کررہی ہے اور اپنے حقوق کی خاطر جدوجہد کرتے رہیں گے۔

بی این پی کے مرکزی سیکرٹریٹ کوئٹہ کے علاوہ مستونگ، سوراب، پنجگور، حب چوکی، ڈیرہ اللّٰہ یار، نوشکی اور دیگر مقامات پر بھی احتجاجی مظاہرے منعقد ہوئے۔

متعلقہ مضامین

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں

تازہ ترین