اتوار, مئی 26, 2024
spot_img
ہومبلوچستانچمن: چمن باڈر کے تاجران اور لغڑی اتحاد کا سرحدی تجارت پہ...

چمن: چمن باڈر کے تاجران اور لغڑی اتحاد کا سرحدی تجارت پہ قدغن اور پاسپورٹ کی شرط کے خلاف دھرنا جاری

بلوچستان کے افغانستان کی سرحد چمن باڈر پر تاجر برادری اور لغڑی اتحاد کا دھرنا جاری ہے جس میں ہزاروں افراد شریک ہیں، جبکہ سیاسی جماعتوں اور باڈر ٹریڈ انجمنوں کی حمایت بھی بھرپور شامل ہے۔ دھرنا حالیہ حکومتی سخت پالیسیوں کے خلاف دیا گیا ہے، جس میں آمد و رفت اور روزگار کیلئے پاسپورٹ اور ویزا کی شرط لازمی قرار دی گئی ہے۔

چمن کے مکین اور تاجر برادری کا کہنا ہیکہ انکی افغانوں کیساتھ تاریخی خونی رشتے ہیں، دونوں طرف مکینوں کے گھر اور قبرستان موجود ہیں، روزگار بھی صدیوں سے جاری ہے اس پر سخت شرائط عائد کرنا دونوں طرف کے رہائشیوں کے ساتھ سنگین زیادتی ہوگی۔ حکومتی پالیسیوں کے خلاف چمن اور قلعہ سیف اللّٰہ سمیت پشتون ریجن سے ہزاروں افراد دھرنے میں شریک ہیں اور سختیوں کے خاتمے تک احتجاج جاری رکھنے کا عندیہ دے چکے ہیں۔

بدھ کے روز دھرنا کی کمیٹی سے نگران صوبائی وزیر اطلاعات و تعلقات عامہ جان اچکزئی نے مذاکرات کیئے جوکہ بے نتیجہ ختم ہوگئے۔ جان اچکزئی نے میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ وہ غیرقانونی آمد و رفت کی مزید اجازت نہیں دے سکتے، تاہم قانونی طور پر رجسٹرڈ 17 لاکھ افغان مہاجرین کو نہیں نکالا جارہا ہے، البتہ باڈر ٹریڈ کے روایتی تسلسل کو بھی انہوں نے غیرقانونی قرار دیکر بغیر ویزہ و پاسپورٹ آمدورفت کی ممانعت کی ہے۔

متعلقہ مضامین

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں

تازہ ترین