پیر, مئی 27, 2024
spot_img
ہومبلوچستانپنجگور: یونیورسٹی آف مکران کے طلباء کا کلاسز کا بائیکاٹ، وائس چانسلر...

پنجگور: یونیورسٹی آف مکران کے طلباء کا کلاسز کا بائیکاٹ، وائس چانسلر کی غلط پالیسیوں کے خلاف دو روز سے طلباء دھرنے پر ہیں۔

یونیورسٹی آف مکران پنجگور کے طلباء گزشتہ دو روز سے کلاسز کا بائیکاٹ کرکے احتجاج کررہے ہیں۔ انکا کہنا ہیکہ وائس چانسلر مالک ترین نے یونیورسٹی میں چارج سنبھالنے سے لیکر اب تک اپنی غلط پالیسیوں سے یونیورسٹی کو شدید نقصان پہنچایا ہے۔ انکا کہنا ہیکہ ڈیڑھ سال سے ہمارا تعلیمی نظام متاثر رہ چکا ہے اس لیے ہم مجبوراً مالک ترین کو نکالنے کے خلاف سراپا احتجاج ہیں اور حکام بالا سے درخواست کرتے ہیں کہ وہ وائس چانسلر کے غیر مناسب کارکردگی کی بنیاد پر اسے یونیورسٹی آف مکران سے برطرف کرنے کے احکامات جاری کریں۔

طلباء کے مطابق ڈیڑھ سال گزرنے کے بعد اب تک یونیورسٹی آف مکران کو ہائیر ایجوکیشن کمیشن سے منظور نہیں کروایا جا سکا ہے۔ یونیورسٹی میں اب تک سینڈیکیٹ کا قیام عمل میں نہیں لایا گیا ہے جس میں یونیورسٹی کے فیصلے لیے جاتے ہیں۔ بغیر ٹیسٹ اور اشتہار کے ایک درجن سے زائد لوگوں کو سفارش کی بنیاد پر یونیورسٹی آف مکران میں تعینات کیا گیا ہے۔ اساتذہ کو روزانہ کی بنیاد پر شوکاز نوٹس جاری کرکے تنگ کیا جارہا ہے جس سے کئی اساتذہ تنگ آکر یونیورسٹی سے استعفی دے چکے ہیں اور کچھ جانے کی تیاری میں ہیں۔ سیاسی وابستگی کی بنیاد پر اسٹاف کے ممبران کو آئے روز دھمکی دے کر تنگ کیا جاتا ہے اور انہیں ٹارچر کیا جاتا ہے۔ ڈیڑھ سال گزرنے کے بعد بھی پراپر چینل سے تعینات ہونے والے اکیڈمک اور ایڈمن اسٹاف کے لوگوں کو مستقل نہیں کیا جاتا تاکہ ان کو کنٹرول میں رکھا جاسکے۔ جو طلباء و طالبات یونیورسٹی میں رہ کر یہ مسائل حل کرنا چاہتے ہیں ان کو فیسوں کے نام پر تنگ کرکے ٹارچر کیا جاتا ہے۔ استاتذہ کو وقتاً فوقتاً آفس میں بلاکر بے عزت کیا جاتا ہے اور کچھ اساتذہ کو طلباء کے سامنے کلاسسز میں بے عزت کیا گیا ہے۔ جو ٹیچر ان مسائل کی نشاندھی کرتا ہے انہیں شوکاز نوٹس جاری کرکے فارغ کرنے کی دھمکی دی جاتی ہے۔

مظاہرے میں شریک طلباء کے مطابق اس کے علاوہ کئی ایسے معاملات ہیں جو یونیورسٹی میں آئے روز اساتذہ اور طلبا کو پیش آتے ہیں اس لیے یونیورسٹی آف مکران میں تعلیمی عمل مکمل متاثر ہے اس لیے گورنر آف بلوچستان سے درخواست ہے کہ وائس چانسلر کے ناقص کارکردگی کو دیکھ کر اسے یونیورسٹی آف مکران سے فارغ کرنے کے احکامات جاری کریں۔ بصورت دیگر طلباء کا احتجاج جاری رہیگا۔

متعلقہ مضامین

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں

تازہ ترین