بدھ, مئی 22, 2024
spot_img
ہومایشیافلسطین: اسرائیل نے غزہ پر مہلک سفید فاسفورس کا استعمال کیا ہے...

فلسطین: اسرائیل نے غزہ پر مہلک سفید فاسفورس کا استعمال کیا ہے جو سنگین جرم ہے۔ ہومن رائٹس واچ 

ہیومن رائٹس واچ نے کہا ہیکہ اسرائیل نے غزہ پر مہلک زہریلی سفید فاسفورس کا استعمال کیا ہے جو بین الاقوامی قوانین کے تحت سنگین جرم ہے۔

ماہرین کے مطابق سفید فاسفورس ایک کیمیائی مادہ ہوتا ہے جسے بموں، راکٹوں اور آرٹلری شیل پر پھیلایا جاتا ہے اور یہ مادہ اس وقت جلتا ہے جب اس کا سامنا آکسیجن سے ہوتا ہے۔ اس کے کیمیائی ردعمل سے 815 ڈگری سینٹی گریڈ حرارت پیدا ہوتی ہے جس سے گاڑھا سفید دھواں اور روشنی بنتی ہے جسے فوجی مقاصد کے لیے استعمال کیا جاتا ہے۔ 

7 اکتوبر کے بعد اب تک غزہ میں جاں بحق ہونے والوں کی تعداد 1500 سے تجاوز کرگئی ہے، جن میں 447 بچوں کی تصدیق اقوام متحدہ کی ایجنسی کرچکی ہے۔ جبکہ اسرائیلی ہلاکتوں کی تعداد 1300 ہے اور 3500 زخمی ہیں۔ 

اسرائیل کی ایئرفورس نے اعتراف کیا ہیکہ انہوں نے غزہ پر 6,000 بم پھینکے ہیں جس سے 3,600 اہداف کا نشانہ بنایا گیا ہے۔

 

اسرائیل زمینی حملوں کی تیاری کر رہی ہے اور غزہ میں داخل ہونے کا منصوبہ بنا لیا ہے۔ اسرائیل نے دس لاکھ سے زائد فلسطینیوں کو غزہ سے نکلنے کا حکم دیا ہے جبکہ غزہ کی گھیراؤ سے انہیں کہیں جانے کا کوئی راستہ بھی میسر نہیں ہے۔ 

مصر کے صدر عدالفتح السیسی نے غزہ کی رہائشیوں کو اپنی جگہیں نا چھوڑنے کا مشورہ دیا ہے۔ 

آئی سی سی کے ججز نے کہا ہیکہ غزہ سمیت فسلطینی علاقے انٹرنیشنل کرنمنل کورٹ کی جوریسڈکشن میں آتی ہیں۔ غزہ میں خوراک، پانی، بجلی اور دیگر امداد کو روکنا بین الاقوامی چارٹر کی خلاف ورزی ہے۔

عرب ممالک نے اسرائیلی جارحیت کی سختی سے مذمت کی ہے۔ دنیا بھر میں فلسطین کی حمایت اور اسرائیل مخالف مظاہرے ہورہے ہیں۔ فرانس نے فلسطین کی حمایت میں مظاہروں پر پابندی عائد کردی ہے۔ جبکہ امریکہ اور برطانیہ نے اسرائیل کیلئے جنگی سازوسامان بھیج کر ہرممکن تعاون کی یقین دہانی کی ہے۔ 

متعلقہ مضامین

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں

تازہ ترین