اتوار, مئی 26, 2024
spot_img
ہومخبریںتربت: محکمہ تعلیم بلوچستان ٹیچنگ کے پوسٹوں کا رزلٹ روک کر نوجوانوں...

تربت: محکمہ تعلیم بلوچستان ٹیچنگ کے پوسٹوں کا رزلٹ روک کر نوجوانوں کی حق تلفی کر رہی ہے، تاخیری حربے قبول نہیں۔ امیدوار نوجوان

محکمہ تعلیم بلوچستان کی جانب سے ٹیچنگ پوسٹوں کے ٹیسٹ کے بعد رزلٹ روکنا نا انصافی ہے، بلوچستان میں سینکڑوں اسکول اساتذہ سے محروم ہیں، بلوچستان حکومت نے ایس بی کے کے ذریعے اسکریننگ ٹیسٹ لیے ہیں جہاں ہزاروں امیدواروں نے ٹیسٹ دیا ہے، مگر ایس بی کے کی جانب سے ابھی تک رزلٹ نہیں آیا ہے اور تاخیر سے کام لیا جا رہا ہے، جس سے ہزاروں نوجوانوں سمیت بلوچستان کا تعلیمی مستقبل مزید خطرے کی جانب جارہاہے۔ ان خیالات کا اظہار حالیہ پوسٹوں پر ٹیسٹ دینے والے امیدواروں اسلم بلوچ، حسن بلوچ، مختار بلوچ، یونس بلوچ، نعمان بلوچ، احمد بلوچ، زوھیب خان، و دیگر نے کیا۔

انہوں نے کہاکہ ہم نے اس امید کیساتھ ٹیسٹ دیا ہے کہ حکومت اور محکمہ تعلیم اور ٹیسٹنگ ادارہ جلد شفاف طریقے سے تعیناتیاں عمل میں لاکر نوجوانوں کو مایوسی سے بچائےگا مگر حالیہ ٹیسٹ کو اب مکمل ہوئے مہینہ سے زائد ہوچکاہے لیکن رزلٹ میں تاخیری حربے استعمال کیے جا رہے ہیں۔ دوسری جانب کوئٹہ کے بلیک میلر صحافی کی جانب سے حالیہ ٹیسٹوں کیخلاف عدالت کا رخ کیا گیا ہے جس سے امیدواروں کا تعلق نہیں بلکہ ہمیں یہ امید ہیکہ عدالت بھی امیدواروں کے ساتھ انصاف کرکے جلد محکمہ تعلیم اور ٹیسٹنگ ادارے کو پابند کرےگا کہ وہ جلد بھرتیوں کو عمل میں لاکر امیدواروں کیساتھ انصاف کرےگا۔

حالیہ پوسٹوں کے حوالے سے مختلف چی میگوئیاں کی جارہی ہیں جس سے نوجوانوں میں تشویش بڑھتا جا رہا ہے بلوچستان کے لاکھوں نوجوان بے روزگار ہیں اور ڈگریاں ہاتھ میں تھامے ہوئے ہیں مگر حکومت انکی داد رسی اور انہیں روزگار کے مواقع فراہم کرنے میں مکمل طور پر ناکام ہے۔ حکومت کو چاہیے کہ حالیہ ٹیسٹنگ کے بعد محکمے اور ٹیسٹنگ ادارے کو پابند کرے کہ وہ رزلٹ جاری کرے اور کسی کی بلیک میلنگ میں نہ آئے بلکہ نوجوانوں کو روزگار فراہم کرے۔

متعلقہ مضامین

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں

تازہ ترین