بدھ, مئی 29, 2024
spot_img
ہومبلوچستانتربت: عزیر بلوچ کی جبری گمشدگی کے خلاف ایم ایٹ شاہراہ پر...

تربت: عزیر بلوچ کی جبری گمشدگی کے خلاف ایم ایٹ شاہراہ پر دھرنا تیسرے روز جاری

ڈی بلوچ (جدگال ڈن) سے ماشاءاللہ ہوٹل( سرگوپ) تک روڈ مختلف مقامات پر بلاک، گاڑیوں کی لمبی قطاریں لگ گئیں۔

گذشتہ ہفتے جبری لاپتہ کیے گئے عزیز بلوچ کی بازیابی کے لیے اہل خانہ نے ڈی بلوچ پوائنٹ( جدگال ڈن) پر ایم ایٹ شاہراہ کو بلاک کردیا ہے۔ احتجاج کے تیسرے دن خواتین مظاہرین اور مشتعل نوجوانوں نے ماشااللہ ہوٹل ( سرگوپ) تک شاہراہ کو مختلف مقامات پر رکاوٹیں ڈال کر بلاک کردیا جس کے نتیجے میں تربت سے لوکل گاڑیوں سمیت گوادر، پسنی اور کراچی کے درمیان چلنے والی ٹریفک مکمل طور پر جام رہ گئی ہے۔

بدھ کو احتجاج میں شدت لاتے ہوئے عزیر بلوچ کے اہل خانہ نے مین شاہراہ کے ساتھ ساتھ ٹریفک کی روانی مکمل جام کرنے کے لیے تمام ایسے راستے بھی بلاک کردیے جو پہاڑوں کے اندر سے گزرتی ہیں۔

سڑکیں بلاک ہونے کے باعث سیکڑوں مسافر اور مال بردار گاڑیاں دونوں جانب پھنس کر رہ گئی ہیں۔ اس دوران خواتین مظاہرین کی جانب سے عام لوگوں سے عزیر بلوچ اور دیگر لاپتہ کیے گئے افراد کی باحفاظت بازیابی یقینی بنانے کے لیے احتجاج میں شامل ہونے کا مطالبہ کیا گیا اور عام مسافروں سے تکلیف پر معذرت بھی کی گئی۔

انہوں نے مسافروں سے معذرت کرتے ہوئے کہا کہ اپنے پیاروں کی زندہ واپسی کے لیے ہمارے پاس اس کے علاوہ کوئی اور آپشن نہیں بچا ہے ہم نے عدالتوں سے لے کر انتظامیہ تک سب کا در کھٹکھٹایا مگر ہمیں انصاف نہیں ملا۔

لاپتہ عزیز بلوچ کے اہل خانہ نے کل بروز جمعرات شام 6 بجے ڈی بلوچ(جدگال) دھرنا گاہ میں اہم پریس کانفرنس کا اعلان کیا ہے۔

متعلقہ مضامین

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں

تازہ ترین