پیر, مئی 27, 2024
spot_img
ہومبلوچستانتربت: جامعہ تربت میں بی ایس او پجار کو کتابیں لے جانے...

تربت: جامعہ تربت میں بی ایس او پجار کو کتابیں لے جانے نہ دینا تعلیم دشمنی ہے جسکی سخت مذمت کرتے ہیں۔ صوبائی ترجمان، بی ایس او پجار

بلوچ اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن پجار کے صوبائی ترجمان نے اپنے جاری کردہ بیان میں کہا ہےکہ تربت یونیورسٹی کے اندر کتاب لے جانے اور بُک اسٹال لگانے پر پابندی ، منشیات ، اسلحہ لے جانے پر آزادی، وائس چانسلر اپنے تنخواہ کے مطابق کام کریں۔ انہوں نے کہا کہ بی ایس او پجار کے ساتھیوں کو گیٹ پر روک کر انہیں گھسیٹ کر اور بَزور بندوق انہیں روکا گیا، یونیورسٹی ایڈمنسٹریٹشن اور چیف سیکورٹی آفیسر ہوش کا ناخن لے آج بلوچستان کے طلباء شعوری طور پر مضبوط ہوچکے ہیں، کلاشنکوف اور پروفائلنگ سے اسٹوڈنٹس کی سیاسی سرگرمیوں پہ قدغن نہیں لگایا جا سکتا، بلوچستان کے یونیورسٹیاں قوم کے اثاثہ ہیں، کسی تننخواہ دار کی جاگیر نہیں، وائس چانسلر تربت یونیورسٹی اپنے تنخواہ کے مطابق ڈیوٹی سر انجام دیں، جس طرح سے ساتھیوں کو روکا گیا یہ ایک واضح پیغام ہے ریاست کی بلوچ سماج اور نوجوانوں کو شعوری طور پر کتاب قلم اور سیاسی سرگرمیوں سے کس طرح سے دور کرنا ہے۔

انہوں نے کہا بلوچستان کے تعلیمی اداروں میں ریاست کی جانب سے کتاب سیاسی سرکل پر قدغن لگا کر بلوچ سماج اور بلوچستان کو پھر سے تاریکی کی طرف لے جانا چاہتے ہیں، نادیدہ قوتیں یاد رکھیں بلوچستان کے تعلیمی ادارے پر سیاسی سرکل اور کتاب کلچر پر پابندی ہرگز قابل قبول نہیں ہوگا، بلوچ اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن پجار اپنے قومی مقدس تعلیمی اداروں میں بُک اسٹال اور سیاسی سرگرمیوں پر کبھی کمپرومائز نہیں کرسکتی م، کتاب کاروان کے نام سے بلوچستان کے تمام تعلیمی اداروں میں بُک اسٹالز کا انعقاد کرینگے۔

متعلقہ مضامین

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں

تازہ ترین